-ذیابیطس کے بارے میں – ٹائپ 1 ذیابیطس سے کیا مراد ہے؟

ٹائپ 1 ذیابیطس کو انسولین کی کمی کی بیماری بھی کہا جاتا ہے۔ یہ بیماری ہر عمر کے لوگوں میں پائی جاتی ہے تاہم بچپن، لڑکپن اور نوجوانی میں اس کا ہونا زیادہ عام ہے۔ ٹائپ 1 ذیابیطس اس وجہ سے ہوتی ہے کہ لبلبے میں انسولین پیدا کرنے والے خلیات (beta سیلز) تباہ ہو چکے ہوتے ہیں۔ کسی نامعلوم وجہ سے جسم کا مدافعتی نظام beta سیلز کو باہر سے جسم میں داخل ہونے والے عناصر سمجھ کر انہیں تباہ کر دیتا ہے۔ ٹائپ 1 ذیابیطس میں مبتلا افراد کیلئے انسولین پمپ یا انسولین پین کے ذریعےانسولین لینا ضروری ہے ۔ معدے اور آنتوں میں خوراک کو ہضم کرنے والی رطوبات انسولین کو تباہ کر دیتی ہیں اس لیے انسولین گولیوں کی صورت میں نہیں لی جا سکتی۔
انسولین ایک ہارمون ہے جو خون میں شوگر کو درست سطح پر رکھنے میں معاون ہوتا ہے اور اس کیلئے خون سے شوگر لے کر خلیات کے اندر پہنچاتا ہے جہاں شوگر توانائی کا ذریعہ بنتی ہے۔ اور ذیابیطس کا علاج اس طرح ہوتا ہے کہ خون میں شوگر کو درست سطح پر رکھنے کیلئے انسولین استعمال کی جاۓ۔
تقریبا 25 ہزار نارویجنوں کو ٹائپ 1 ذیابیطس لاحق ہے۔ ہر سال تقریبا 600 نارویجنوں کو ٹائپ 1 ذیابیطس تشخیص ہوتی ہے اور جہاں تک بچوں کی ذیابیطس کا تعلق ہے، ناروے دنیا بھر میں سب سے آگے ہے۔ ناروے میں ہر سال 15 سال سے کم عمر کے 250 بچوں کو ٹائپ 1 ذیابیطس تشخیص ہوتی ہے۔ پچھلے 30 سالوں میں ناروے میں ذیابیطس میں مبتلا ہونے والے بچوں کی تعداد دوگنی ہو گئ ہے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s